مسئلہ فلسطین پر امریکہ اور عرب ملکوں کے درمیان گٹھ جوڑ

مسئلہ فلسطین پر امریکہ اور عرب ملکوں کے درمیان گٹھ جوڑمقدس دفاع نیوز ایجنسی کی بین الاقوامی رپورٹر رپورٹ کے مطابق، امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے قطر کے امیر تمیم بن حمد آل ثانی، مصر کے صدر عبدالفتاح السیسی، سعودی ولی عہد محمد بن سلمان اور ابوظہبی کے ولی عہد محمد بن زائد سے سینچری ڈیل کے بارے میں تبادلہ خیال مکمل کر لیا ہے اور طے پایا ہے کہ اس منصوبے کا مقررہ وقت پر اعلان کر دیا جائے گا۔

اس رپورٹ کے مطابق بعض با خبر ذرائع نے بتایا ہے کہ سینچری ڈیل کے تحت فلسطینی مملکت محدود اختیارات کے ساتھ، غرب اردن کے آدھے علاقے اور غزہ پر مشتمل ہو گی اور ابودیس کا علاقہ اس کا دارالحکومت ہو گا۔

سینچری ڈیل کے تحت غرب اردن کی تمام گزرگاہوں کی سیکورٹی اسرائیل کے پاس ہو گی اور صرف مشرقی بیت المقدس کے بعض محلے فلسطین میں شامل کیے جائیں گے جبکہ حماس کی جانب سے ہتھیار ڈالنے کی صورت میں غزہ کو بھی فلسطینی مملکت کا حصہ بنایا جائے گا۔

امریکہ کے اس سازشی منصوبے کے تحت فلسطینیوں کی وطن واپسی کا حق ہمیشہ کے لیے ختم ہو جائے گا اور مسجد الاقصی کا انتظام اردن فلسطین اور اسرائیل مشترکہ طور پر چلائیں گے۔

پیغام کا اختتام/