اپ ڈیٹ: 11 November 2019 - 13:28
امریکی کانگریس میں ڈیموکرٹیک پارٹی کی مسلمان خاتون رکن اپنی پارٹی اور صیہونی لابی کے دباؤ کی وجہ سے اپنے اس بیان پر معافی مانگنے پر مجبور ہوگئیں جسے یہودی دشمنی سے تعبیر کیا گیا تھا۔
خبر کا کوڈ: ۳۶۳۳
تاریخ اشاعت: 21:40 - February 12, 2019

امریکی ایوان نمائندگان کی مسلمان خاتون رکن معافی مانگنے پر مجبورمقدس دفاع نیوز ایجنسی کی بین الاقوامی رپورٹر رپورٹ کے مطابق، امریکی ایوان نمائندگان کی نو منتخب مسلمان خاتون رکن ایلہان عمر نے ایک بیان میں کہا ہے کہ میں اپنے یہودی ساتھیوں اور اتحادیوں کا جنھوں نے مجھے تاریخ بتائی ہے شکریہ ادا کرتی ہوں۔

ایلہان عمر نے اس سے پہلے اپنے ٹویٹر پیج پر لکھا تھا کہ صیہونی لابی ایپک امریکی سیاستدانوں کو پیسے دیتی ہے تاکہ وہ اسرائیل کی حمایت کریں۔ ڈیموکرٹیک پارٹی کے لیڈروں اور ساتھ ہی ایوان نمائندگان کی اسپیکر ننسی پلوسی نے جن کا تعلق بھی ڈیموکریٹک پارٹی سے ہے پچھلے چند روز سے ایلہان عمر پر دباؤ ڈال رکھا تھا کہ وہ اپنے اس بیان پر جس میں ایک اہم راز سے پردہ ہٹا ہے معافی مانگیں۔

اس دوران ریپبلیکنز ارکان نے بھی اسرائیل پر ایلہان عمر کی تنقید کا بہانہ بناتے ہوئے ایوان نمائندگان میں خارجہ تعلقات کی کمیٹی میں ان کی رکنیت پر ناراضگی کا اظہار کیا ہے۔

پیغام کا اختتام/

آپ کا تبصرہ
نام:
ایمیل:
* رایے: