اپ ڈیٹ: 11 November 2019 - 13:28
عراق کے صدر برھم صالح ایک اعلی سطحی سیاسی اور اقتصادی وفد کے ہمراہ ہفتے کو تہران پہنچے جہاں سعد آباد کمپلیکس میں اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر ڈاکٹر حسن روحانی نے ان کا سرکاری طور پر پر تپاک استقبال کیا۔
خبر کا کوڈ: ۳۰۵۶
تاریخ اشاعت: 15:33 - November 17, 2018

عراقی صدر کا تہران میں پرتپاک خیر مقدممقدس دفاع نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، اس موقع پر دونوں ملکوں کے قومی ترانے بجائے گئے اور عراقی صدر کو گارڈ آف آنر پیش کیا گیا۔عراق کے صدر منتخب ہونے کے بعد برہم صالح کا یہ پہلا دورہ ایران ہے۔ عراقی صدر کے دورہ ایران کا مقصد دوطرفہ تعلقات کی توسیع اور علاقائی اور عالمی مسائل پر تبادلہ خیال کرنا ہے۔

اس دورے میں ایران اور عراق کے مابین، سیکورٹی، تجارتی اقتصادی اور ثقافتی تعلقات کو پہلے زیادہ سے زیادہ مستحکم بنانے کے طریقوں پر غور کیا جائےگا۔

عراقی صدر کے اعزاز میں سرکاری استقبالیہ تقریب کے بعد دونوں ملکوں کے صدور کی سربراہی میں ایران اورعراق کے اعلی سطحی سیاسی اور اقتصادی وفود نے سعد آباد کمپلیکس میں باقاعدہ مذاکرات انجام دئے۔

اس وقت ایران اور عراق کے درمیان تجارتی لین دین کا حجم بارہ ارب ڈالر سالانہ ہے اور دونوں ممالک اس حجم کو بڑھا کر سالانہ بیس ارب ڈالر کرنا چـاہتے ہیں۔

پیغام کا اختتام/

آپ کا تبصرہ
نام:
ایمیل:
* رایے:
مقبول خبریں