اپ ڈیٹ: 11 November 2019 - 13:28
ایران کی مسلح افواج کے سربراہ میجر جنرل محمد باقری نے مطالبہ کیا ہے کہ پاکستان ایرانی سرحدی محافظین کو اغوا کرنے والے دہشت گرد عناصر کو فوری گرفتار کرنے کے لئے ٹھوس اقدامات کرے اور ایرانی سرحدی محافظوں کو بازیاب کرائے
خبر کا کوڈ: ۲۸۵۳
تاریخ اشاعت: 21:06 - October 20, 2018

ایرانی سرحدی محافظوں کے اغوا کا معاملہ، مسلح افواج کے سربراہ کا پاکستان سے مطالبہمقدس دفاع نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، ایران کے چیف آف آرمی اسٹاف میجر جنرل محمد باقری نے پاکستان کے چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوا سے ہفتے کو ٹیلیفون پر گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ مشترکہ سرحدوں پر سیکورٹی کے تحفظ کے لئے ایران اور پاکستان کی مسلح افواج کے درمیان طے شدہ دو طرفہ سمجھوتے کی بنیاد پر تہران کو امید ہے کہ پاکستان کی مسلح افواج، ایران کے سرحدی محافظین کو اغوا کرنے والے عناصر کو گرفتار اور ایرانی سرحدی محافظین کو رہا کرانے کے لئے جلد سے جلد تمام ضروری اقدامات عمل میں لائیں گی۔

جنرل باقری نے ایران سے ملنے والی پاکستان کی سرحدوں میں امن و استحکم کو مضبوط بنانے کے لئے پاکستان کی سیکورٹی فورسز کی زیادہ سے زیادہ تعیناتی کی ضرورت پر بھی زور دیا تاکہ دہشت گردوں اور شرپسندوں کی سرگرمیوں کو کنٹرول کیا جا سکے۔

اس گفتگو میں پاکستان کے آرمی چیف نے بھی میرجاوہ کے زیروپوائنٹ پر پیش آنے والے اغوا کے واقعے پر افسوس کا اظہار اور اغوا کاروں کے تعاقب میں پاکستانی فوج کے اقدامات کی وضاحت پیش کرتے ہوئے امید ظاہر کی کہ جلد ہی نتیجہ نکل آئے گا اور یرغمال ایرانی سرحدی محافظوں کو رہا کرا لیا جائے گا۔

واضح رہے کہ پندرہ اکتوبر کو ایران کی میرجاوہ سرحد پر زیروپوائنٹ علاقے سے انقلاب مخالف شرپسند و دہشت گرد عناصر نے چودہ ایرانی سرحدی محافظوں کو اغوا کر کے پاکستان کے علاقے میں منتقل کر دیا۔

پیغام کا اختتام/

آپ کا تبصرہ
نام:
ایمیل:
* رایے:
مقبول خبریں