اپ ڈیٹ: 11 November 2019 - 13:28
ایران کے وزیر خارجہ جواد ظریف نے صہیونی وزیراعظم بنجمن نیتن یاہو کی جانب سے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں اپنے خطاب کے دوران تہران کے مضافات میں 'خفیہ ایٹمی مراکز' قائم کیے جانے کے دعوے کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ ایک جھوٹا ہے۔
خبر کا کوڈ: ۲۶۶۵
تاریخ اشاعت: 12:32 - September 30, 2018

صہیونی وزیراعظم کے الزامات بے بنیاد اور من گھڑت ہیں، جواد ظریفمقدس دفاع نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، صہیونی وزیراعظم کی اسلامی جمہوریہ ایران کے خلاف ہرزہ سرائی اور الزامات پر رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے وزیرخارجہ محمد جواد ظریف نے کہا کہ نیتن یاہو کے تمام ترالزمات بے بنیاد اور من گھڑت ہیں۔

ایران کے وزیر خارجہ محمد جواد ظریف کا کہنا تھا کہ ’نیتن یاہو جھوٹے ہیں،وہ جھوٹ بولنا نہیں چھوڑیں گے۔
انہوں نے کہا کہ اسرائیل خطے کا واحد ملک ہے جس کے پاس خفیہ اور غیر اعلانیہ جوہری پروگرام ہیں، اب وقت آگیا ہے کہ اسرائیل اپنے غیر قانونی جوہری ہتھیاروں کے پروگرام سے متعلق بین الاقوامی تفتیش کاروں کو آگاہ کرے

ایرانی وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے سی بی ایس کو انٹرویو دیتےہوئے تہران کے قریب خفیہ ایٹمی مواد کے بارے میں صہیونی وزیر اعظم نیتن یاہو کے الزامات کو بے بنیاد اور مہمل قراردیتے ہوئے کہا ہے کہ اسرائیلی وزیر اعظم کے گذشتہ الزامات کے بارے میں بھی بین الاقوامی جوہری ادارے "  آئی اے ای اے "  نے تحقیقات انجام دیں جس کے بعد معلوم ہوا کہ نیتن یاہو کے الزامات جھوٹے اور بے بنیاد ہیں۔

جواد ظریف نے کہا کہ نیتن یاہو کے پہلے دعوے بھی جھوٹ ثابت ہوئے اور اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں تہران کے قریب خفیہ  ایٹمی مواد کے بارے میں بھی دعوی جھوٹا ہے۔ 

جواد ظریف نے مزیدکہا کہ نیتن یاہو جھوٹ بولنے میں ماہر ہیں۔

پیغام کا اختتام/

آپ کا تبصرہ
نام:
ایمیل:
* رایے:
مقبول خبریں