اپ ڈیٹ: 11 November 2019 - 13:28
بھارتی آرمی چیف نے ایسی حالت میں مقبوضہ کشمیر میں اپنی فوج کا ہدف عسکریت پسندی کا خاتمہ اور کشمیریوں کیخلاف پرتشدد کارروائیوں کو عوام دوست قرار دیا ہے کہ اس وادی میں روزانہ کی بنیاد پر متعدد جوان شہید اور زخمی ہوتے ہیں۔
خبر کا کوڈ: ۱۷۳۰
تاریخ اشاعت: 21:53 - July 01, 2018

مقبوضہ کشمیر؛ روزانہ متعدد شہریوں کی شہادت اور بھارتی آرمی چیف کا دوغلا بیانمقدس دفاع نیوز ایجنسی کی بین الاقوامی رپورٹر رپورٹ کے مطابق، بھارتی آرمی چیف جنرل بپن راوت نے مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کی کارروائیوں کے حوالے سے کہا ہے کہ وادی میں فوج کا ہدف عسکریت پسندی کا خاتمہ ہے، ہماری کارروائیاں عوام دوست ہیں۔

جنرل بپن راوت نے نئی دہلی میں ایک تقریب کے حاشیے پرنامہ نگاروں کے سوالات کاجواب دیتے ہوئے کہا فوج کشمیرمیں عوام دوستانہ ماحول میں جنگجومخالف کارروائیاں انجام دیتی ہے۔ جنگجوؤں کیخلاف آپریشن انجام دینے کیلئے ایک طریقہ کاراورایک مقررہ ضابط کارہے اور فوج وفورسزاسکی پابندی کویقینی بناتے ہیں۔

بپن راوت نے کہا کہ ہم کشمیروادی میں جنگجوؤں کیخلاف عوام دوستانہ اندازمیں کارروائیاں انجام دیتے ہیں کیونکہ ہمارا مقصدعام اوربے قصورلوگوں کوتکلیف سے دوچارکرنانہیں ۔ فوج اورفورسزپرجنگجومخالف آپریشن کے دوران سفاکانہ طورطریقہ اپنانے کے الزامات عائدکئے جاتے ہیں جوکہ سراسرغلط اوربے بنیادہے۔

آرمی چیف کاکہناتھاہمارابنیادی مقصدکشمیروادی میں تشدداوربدامنی پھیلانے والے جنگجوؤں کاتعاقب کرناہے ،اور ہماری کارروائیوں کامقصدعام لوگوں کوتکلیف دینانہیں جوکہ کسی بھی طرح کاتشددنہیں کرتے۔انہوں نے مزیدکہاکہ آپریشن عوا م دوستانہ طریقے سے انجام دیے جاتے ہیں۔

آپ کا تبصرہ
نام:
ایمیل:
* رایے:
مقبول خبریں