اپ ڈیٹ: 11 November 2019 - 13:28
ایران کے پاکستان کیساتھ سرحدی شہر زاہدان میں منعقد ہونے والے دونوں ممالک کے وفود نے سرحدی سلامتی کو مضبوط بنانے اور دہشتگرد عناصر کے خلاف آہنی ہاتھوں سے نمٹنے پر سیر حاصل بحث کی۔
خبر کا کوڈ: ۱۶۵۰
تاریخ اشاعت: 19:12 - June 23, 2018

پاک ایران مستقل سرحدی کمیٹی کا پانچواں اجلاسمقدس دفاع نیوز ایجنسی کی بین الاقوامی رپورٹر رپورٹ کے مطابق، پاکستان سے ملحقہ ایران کے سرحدی صوبے سیستان و بلوچستان کے دارالحکومت زاہدان میں دونوں ممالک کی مستقل سرحدی کمیٹی کا پانچواں اجلاس منعقد ہوا۔

پاکستان سے ملحقہ ایران کے سرحدی صوبے سیستان و بلوچستان کے دارالحکومت ”زاہدان” میں دونوں ممالک کی مستقل سرحدی کمیٹی کے پانچویں اجلاس میں سکیورٹی مسائل، تجارتی سرگرمیوں اور باہمی تعاون پر غور کیا گیا۔

ایران کے صوبے سیستان و بلوچستان کے ڈائریکٹریٹ جنرل آف سیکیورٹی اور ایڈمنسٹریشن کے سربراہ غلام رضا گنجی نے اس حوالے سے بتایا کہ ایرانی اور پاکستانی وفود نے سرحدی سلامتی کو مضبوط بنانے اور دہشتگرد عناصر کے خلاف آہنی ہاتھوں سے نمٹنے پر بات چیت کی۔

اجلاس میں دونوں ممالک کے سرحدی امور، سکیورٹی کے مسائل، سرحدی دیہات پر تجارتی سرگرمیوں اور باہمی تعاون پر غور کیا گیا۔

اس اجلاس میں پاکستانی حکام کے ساتھ مشترکہ سرحد پر 26 اپریل 2017 کو جیش الظلم دہشتگرد گروہ کے حملے اور 9 ایرانی بارڈر سکیورٹی گارڈز کی شہادت اور دہشتگردوں کے ہاتھوں اغوا ہونے والے ایرانی سرحدی اہلکار کی بازیابی پر گفتگو ہوئی۔ 

واضح رہے کہ گزشتہ روز پاکستانی صوبے بلوچستان کا وفد تفتان سرحد کے راستے زاہدان پہنچا تھا۔

یہ ایسی حالت میں ہے کہ گزشتہ دنوں ایران کے سرحدی علاقے زابل میں پاکستانی سرزمین سے دہشتگردوں نے داخلے کی کوشش کی تھی جس پر ایرانی سیکورٹی فورسز کی جانب سے مزاحمت پر جھڑپ شروع ہوئی جس کے نتیجے میں دو ایرانی اہلکار شہید اور تین زخمی ہوئے تھے۔

پیغام کا اختتام/

آپ کا تبصرہ
نام:
ایمیل:
* رایے:
مقبول خبریں