اپ ڈیٹ: 11 November 2019 - 13:28
اسلامی جمہوریہ ایران نے کہا ہے کہ سعودی حکام نے اسرائیل کے ہمراہ اپنے ملک کو مشرق وسطی میں جرائم و جارحیت کے ایک نمونے میں تبدیل کر دیا ہے۔
خبر کا کوڈ: ۱۱۵۹
تاریخ اشاعت: 19:37 - April 12, 2018

سعودی عرب مشرقی وسطی میں اسرائیل کے ہمراہ ظلم و جارحیت کی علامتمقدس دفاع نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان بہرام قاسمی نے سعودی ولیعہد کے دورہ فرانس میں ایران مخالف ان کے بیان پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ علاقے کے ممالک اور قومیں، القاعدہ اور داعش جیسے دہشت گرد گروہوں کے قیام، ان کی حمایت اور انھیں مسلح کرنے میں کہ جنھوں نے پڑوسی ملکوں، علاقے اور دنیا کے مختلف ملکوں میں وحشیانہ ترین جرائم کا ارتکاب کیا ہے، zسعودی عرب کے کردار کو کبھی فراموش نہیں کریں گی۔

ترجمان وزارت خارجہ نے کہا کہ اگر سعودی حکام، اربوں ڈالر خرچ کر کے یمن پر جارحیت میں اپنی ناکامی اور علاقے میں اسرائیل کا ساتھ دینے نیز اپنے کالے کوتوں پر پردہ ڈالنا اور اغیار کی حمایت حاصل کرنا چاہتے ہیں تو انھیں علاقے میں کچھ عرصے قبل کے اپنے اتحادی یعنی عراق کے اس وقت کے ڈکٹیٹر صدام کی سرنوشت پر توجہ دینا ہو گی۔

ایران کی وزارت خارجہ کے ترجمان بہرام قاسمی نے کہا کہ ماضی و حال میں بعض سعودی حکمرانوں نے غلط پالیسیاں اختیار اور صیہونی حکومت کے ساتھ ہاتھ ملا کر مغربی ایشیا کے علاقے کو بحران، عدم استحکام اور جنگ کی آگ میں جھونک دیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ امید ہے کہ فرانسیسی حکام سعودی حکام سے اپنی ملاقاتوں میں انھیں علاقے میں ماضی کے ڈکٹیٹروں کے مستقبل کی یاد دہانی بھی کرائیں گے۔

آپ کا تبصرہ
نام:
ایمیل:
* رایے:
مقبول خبریں