اپ ڈیٹ: 10 July 2019 - 08:54
اسلامی ایران کے وزیر خارجہ محمد جواد ظریف نے ایرانی حکام کے ساتھ سعودی وزیر خارجہ کے کسی بھی طرح کے ٹیلیفونی رابطے پر لاعلمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ سعودی عرب کو اپنی علاقائی پالیسیوں پر نظرثانی کرنا ہو گی اور جب بھی ایسا ہو گا ایران پڑوسیوں کے ساتھ خوشگوار تعلقات کے لئے آمادہ رہے گا۔
خبر کا کوڈ: ۲۹۳۱
تاریخ اشاعت: 21:19 - November 01, 2018

ایران کے وزیر خارجہ کی دورہ اسلام آباد سے واپسیمقدس دفاع نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، ایران کے وزیر خارجہ نے اپنے دورہ اسلام آباد سے واپسی پر نامہ نگاروں سے گفتگو میں ایرانی حکام کے ساتھ سعودی وزیر خارجہ عادل الجبیر کے رابطے پر مبنی عرب ذرائع‏ ابلاغ کے دعوے پر کہا کہ ایران کا کوئی بھی پڑوسی ملک، تہران کے ساتھ کشیدگی پیدا کر کے ہرگز کوئی فائدہ نہیں اٹھا سکا ہے اس لئے پڑوسیوں کو اس قسم کی پالیسیوں سے دستبردار ہوجانا چاہئے انھوں نے اپنے دورہ اسلام آباد کے نتائج کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ پاکستانی حکام نے یقین دلایا ہے کہ وہ اغوا شدہ ایرانی سرحدی محافظوں کو رہا کرانے کی کسی کوشش سے دریغ نہیں کریں گے۔

ایرانی وزیرخارجہ محمد جواد ظریف نے کہا کہ اس دورے میں ایران اور پاکستان کے دو طرفہ تعلقات کے علاوہ علاقائی مسائل منجملہ افغانستان اور یمن کے بارے میں بھی گفتگو ہوئی۔ایران کے وزیر خارجہ نے اپنے دورہ اسلام آباد میں پاکستان کے وزیر اعظم ، وزیر خارجہ اور آرمی چیف سے الگ الگ ملاقات کی۔ اغوا شدہ ایرانی سیکورٹی اہلکاروں کو رہا کرانے کی کوششوں کے دائرے میں یہ ایک روزہ دورہ، بدھ کے روز انجام پایا۔

ایرانی سیکورٹی اہلکاروں کو دہشت گردوں نے ایران کے سرحدی علاقے میرجاوہ سے اغوا کرکے پندرہ اکتوبر کو پاکستانی علاقے میں منتقل کردیاہے -

آپ کا تبصرہ
نام:
ایمیل:
* رایے: